حمل کے دوران خون آنا

حمل کے دوران خون آنا (vaginal bleeding during pregnancy) ایک خطرناک حالت ہو سکتی ہے اور آپ کو فوری طبی مدد کی ضرورت ہوتی ہے۔ خون آنے کی وجوہات اور علامات مختلف ہو سکتی ہیں اور منحصر ہو سکتی ہیں عوامل جیسے حمل کی دورانیہ، خون کی مقدار اور دورانیہ کی لمبائی پر۔ذاتی خصوصیات: حمل کے دوران ایک عورت کے جسم میں ہارمونل تبدیلیاں رونما ہوتی ہیں، جو مختلف انسانوں میں مختلف طریقہ سے نمایاں ہوتی ہیں۔ کچھ عورتوں کو اپنی ماہواری کی طرح حمل کے پہلے چند مہینوں تک خون آ سکتا ہے، جسے “ماہواری خاموش” یا “ماہواری کے قریبی” کہا جاتا ہے۔ اس سوال کو وضاحت دینے کے لئے طبی ماہر سے مشورہ کرنا بہتر ہوتا ہے۔

حمل کے دوران پیٹ کے نچلے حصے میں درد

نشانی میں بے قابوی: حمل کے دوران عورت کے جسم میں رگوں کی بڑھتی ہوئی رقبتیں (cervical ectropion) یا ایسا کوئی دوسرا معاملہ ہو سکتا ہے جس کی بنا پر جسم سے خون کا آنا ہوتا ہے۔

پروگیسٹرون کی کمی: کبھی کبھی، حمل کے دوران پروگیسٹرون کی کمی کی وجہ سے رحم کی لائن میں تبدیلی رونما ہو سکتی ہے، جس کی بنا پر خون کا اخراج ہوتا ہے۔

کچھ پریشانیاں: زندگی کے مختلف پہلوؤں جیسے کہ روزمرہ کی پریشانیاں، جسم کی حالت، یا رکاوٹی عوامل مثلاً زچگی کا پورا عمل خون کا آنا بھی منجر کر سکتا ہے۔

متبادل سوالات: خون کا آنا خود میں مختلف امراض یا حالات کی علامت بھی ہو سکتی ہے، جیسے کہ رحم کی تنگی، یعنی رحم کی قسمیں معمولی سے تنگ ہونا، یا کسی اخراج کی راہ میں رکاوٹ ہونا۔ مردانہ طاقت کو بڑھانے والا، معجون خاص

حمل کے دوران خون آنا

اگر آپ حاملہ ہیں اور خون آ رہا ہے، تو مندرجہ ذیل صورتوں میں فوری طبی مدد کی ضرورت ہوتی ہے

1. خون کی مقدار زیادہ ہو رہی ہے۔

2. درد یا کمر درد کے ساتھ خون آ رہا ہے۔

3. خون کی رنگت سیاہ یا قہوی ہے۔

4. خون کے علاوہ باقی ناسوں میں بھی خون ہے۔

5. خون آنے کے ساتھ چکر یا بے ہوشی کی حالت آ رہی ہے۔

حمل کے دوران خون آنا

یہ علامات کے ممکنہ کچھ مثالیں ہیں۔

خون آنے کی وجوہات میں منحصر ہو سکتے ہیں:

– زیادہ تناؤ رکھنے والی جسمانی سرگرمی

– زیادہ وزن کا حاملہ ہونا

– رحمی کیسر یا نسوانی ذیابیطس

– رحمی جوڑوں کا منفجر ہونا یا سرجری کا نتیجہ

– مقعدی سیاسٹ میں تکسیر یا نقص

حمل کے دوران خون آنا

– حاملہ یا جنسی متعلقہ امراض مثل گرمی (placenta previa) یا رحمی کی جلدی سیاسٹ (abruptio placenta)

خون آنے کے لئے کئی دلائل ہو سکتی ہیں، لہٰذا یہ ضروری ہے کہ آپ فوری طبی مدد حاصل کریں۔ آپ کا طبی ماہر حاملہ کیسا مقام بتائے گا اور آپ کو درست علاج کیسے مل سکتی ہے۔

حمل کے دوران خون آنا

اگر آپ کو حمل کے دوران غیر معمولی خون بہہ رہا ہو تو کیا کریں۔
چونکہ کسی بھی سہ ماہی میں اندام نہانی سے خون بہنا کسی مسئلے کی علامت ہو سکتا ہے، اپنے ڈاکٹر کو کال کریں۔ ایک پیڈ پہنیں تاکہ آپ اس بات پر نظر رکھ سکیں کہ آپ کو کتنا خون بہہ رہا ہے، اور خون کی قسم کو ریکارڈ کریں (مثال کے طور پر، گلابی، بھورا، یا سرخ؛ ہموار یا جمنے سے بھرا ہوا)۔ اندام نہانی سے گزرنے والے کسی بھی ٹشو کو اپنے ڈاکٹر کے پاس جانچ کے لیے لائیں۔ جب آپ ابھی بھی خون بہہ رہے ہوں تو ٹیمپون کا استعمال نہ کریں یا جنسی تعلق نہ کریں۔

آپ کا ڈاکٹر تجویز کر سکتا ہے کہ آپ زیادہ سے زیادہ آرام کریں اور ورزش اور سفر سے گریز کریں۔

آپ کو الٹراساؤنڈ حاصل کرنے کی توقع کرنی چاہئے تاکہ یہ معلوم کیا جا سکے کہ آپ کے خون بہنے کی بنیادی وجہ کیا ہو سکتی ہے۔ اندام نہانی اور پیٹ کے الٹراساؤنڈ اکثر مکمل تشخیص کے حصے کے طور پر ایک ساتھ کیے جاتے ہیں۔

ایمرجنسی روم میں جائیں یا فوری طور پر 911 پر کال کریں اگر آپ کو درج ذیل علامات میں سے کوئی علامت ہو، جو اسقاط حمل یا دیگر سنگین مسئلے کی علامت ہو سکتی ہے:

پیٹ میں شدید درد یا شدید درد
شدید خون بہنا، درد کے ساتھ یا بغیر
اندام نہانی سے خارج ہونے والا مادہ جس میں ٹشو ہوتا ہے۔
چکر آنا یا بے ہوشی
100.4 یا اس سے زیادہ ڈگری فارن ہائیٹ کا بخار اور/یا سردی لگ رہی ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top