زکام کا علاج

زکام ایک عام بیماری ہے جو نوزائیدہ سردیوں میں زیادہ متاثرہ ہوتی ہے۔ زکام کے علاج کے چند اہم اقدامات مندرجہ ذیل ہیں:

استراحت: زکام میں پوری آرام کی ضرورت ہوتی ہے، تاکہ جسم کو بیماری کا مقابلہ کرنے کی طاقت مل سکے۔

پانی کی زیادہ مقدار میں استعمال: پانی کا زیادہ استعمال کرنے سے جسم میں نمی کی کمی نہیں ہوتی اور بیماری کا دورانیہ کم ہوتا ہے۔

گرمائیں استعمال کرنا: گرمائیں استعمال کرنے سے جسم کی سردی کم ہوتی ہے اور آرام ملتا ہے۔

گرم لیکن نرم خوراک: گرم خوراک کھانے سے جسم کو اضافی توانائی ملتی ہے اور اس کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت میں اضافہ ہوتا ہے۔

نمکین پانی گرگرہ کرنا: نمکین پانی سے گلے کی سوزش کم ہوتی ہے اور نکسان کم ہوتا ہے۔

نمک کی مقدار میں کمی: بیماری کے دوران نمک کی زیادہ مقدار کے استعمال سے پانی کی کمی بڑھ سکتی ہے جو جسم کے لئے ناکر ثابت ہوتی ہے۔

دیکھ بھال کریں: بیماری کے دوران منظم طور پر ہاتھ دھونا، منزل کو صفائی دینا اور اپنی صحت کی دیکھ بھال کرنا بہت اہم ہوتا ہے۔

چمکتے ہوئے بندرقیقی خوراک: وٹامن سی کی زیادہ مقدار والی خوراک استعمال کرنے سے جسم کی مزاج کمی کم ہوتی ہے اور جلد کو طاقت ملتی ہے۔

چکنے زکام کی دوائیں: اگر زکام کا علاج ضروری ہو تو چکنے زکام کی دوائیں بھی استعمال کی جاتی ہیں جو کسی معالج کی مشورہ لینے کے بعد حاصل کی جائیں۔

براہ کرم یاد رہے کہ میں کوئی دوائیں تجویز نہیں کرتا، بلکہ آپ کسی معالج سے مشورہ کریں جو آپ کی صحت کے حوالے سے مختص ہو۔

زکام کا علاج

زکام کا دیسی علاج

زکام کا دیسی علاج گھریلو طریقوں کو استعمال کرتے ہوئے کیا جا سکتا ہے۔ یہاں کچھ دیسی علاج کے اقدامات دیے گئے ہیں:

ادرک (Ginger): ادرک زکام کے علاج کے لئے مفید ہوتا ہے۔ آپ ادرک کے ٹکڑے کاٹ کر اس کو پانی میں بوائل کر پی سکتے ہیں یا ادرک کی چائے بنا سکتے ہیں۔

لہسن (Garlic): لہسن میں موجود انٹی‌وائرل اور اینٹی‌بیکٹیریل خصوصیات کی بنا پر زکام کا علاج کرتا ہے۔

شہد (Honey): گرم پانی میں شہد ملا کر پینا زکام کی صورت میں آرام دیتا ہے اور گلے کی سوزش کو کم کرتا ہے۔

نیم (Neem): نیم کے پتوں کو پانی میں اُبال کر اس پانی سے گراری کرنا زکام کے لئے مفید ہوتا ہے۔

تل (Sesame Oil): ناک میں تل کی بوندیوں کو ڈالنا نکسان کم کرتا ہے اور جلد کو آرام دیتا ہے۔

تلی (Mustard Oil): تلی کو ہلکا گرم کر کے چھاتی اور پیٹ پر مالنا زکام کی سانس کی مشکل کو کم کر سکتا ہے۔

پودینہ (Mint): پودینہ کے پتوں کو بوائل کر کے اس کی چائے بنا کر پی سکتے ہیں، جو نفسیاتی اضطراب کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتی ہے۔

سونف (Fennel Seeds): سونف کو پانی میں بوائل کر کے پی سکتے ہیں جو گلے کی سوزش کو کم کرتا ہے۔

لسودا (Liquorice): لسودا زکام کے علاج کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔ آپ اس کا قدرتی پاؤڈر بنا کر استعمال کر سکتے ہیں۔

مولی (Radish): مولی کا رس گرم پانی میں ملا کر پینا زکام کے علاج میں مدد فراہم کرتا ہے۔

یہ تراویح صرف آپ کی عوامل صحت کو بہتر کرنے کے لئے ہیں اور اگر آپ کی صحت میں بڑی تبدیلی نہیں آتی تو آپ کو ایک ماہر طب کی مشورہ لینا چاہئے۔

زکام کا دیسی علاج

زکام چیست

زُکام ایک عام بیماری ہے جو نفسیاتی یا جسمانی عوامل کی بنا پر ناک، گلے، سانس کی راہوں اور حلق کی ورزش کو متاثر کرتی ہے۔ یہ بیماری عموماً وائرس کی وجہ سے پیدا ہوتی ہے، لیکن کبھی کبھار بیکٹیریا بھی زکام کی وجہ بن سکتے ہیں۔

زکام کے علامات درج ذیل ہوتی ہیں:

نکسان کی علامات: گلے کی خراش، کھانسی، بینائی پلکوں کی پیچیدگی اور آنکھوں کی خراشیں شامل ہوتی ہیں۔

سردی یا تپ تنش کی علامات: تپتنش، جسم کی درد، سر درد اور ہلکی بخار کی شکایت ممکن ہوتی ہے۔

نزلہ زکام: گلے کا درد، سانس لینے میں مشکل، اسراک اور نکسان کی شکایت ہوتی ہے۔

کھانسی: خشک کھانسی یا بلغمی کھانسی بھی زکام کی ایک علامت ہو سکتی ہے۔

زکام عموماً آپس میں قریبی تماس کے ذریعے منتقل ہوتا ہے، جیسے کہ کھانسنے یا چھینے کرتے وقت کی ہوائی ذرات کے ذریعے یا ہاتوں کے مسمارنے کے بعد چہرے کو چھونے کے بعد۔

زکام کے علاج کے لئے استراحت، پنی کی زیادہ مقدار میں استعمال، گرمائیں، مناسب غذائیں، اور دیگر گھریلو اقدامات کارآمد ثابت ہوتے ہیں۔ اگر آپ کی صحتی حالت خراب ہو یا علامات بڑھتی ہوئی ہوں، تو ڈاکٹر سے مشورہ کرنا بہتر ہوتا ہے۔

زکام چیست

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top