پیلا یرقان

پیلا یرقان (Jaundice) ایک صحت کی مسائل کی شکل ہے جس میں جلد اور آنکھوں کے سفید حصوں کی رنگت زرد ہو جاتی ہے۔ یہ ایک علامت ہوتی ہے کہ جسم میں بلی رنگ کے پگمنٹ بلیروبن جمع ہو گیا ہے، جو خون کوشش کرتا ہے کہ وریدوں کے ذریعے کربن دائی آکسائیڈ کو جسم سے خارج کرے۔ پیلا یرقان کی مختلف وجوہات ہوتی ہیں جن میں شامل ہیں:

جگر کی بیماریاں: مثلاً جگر کا انفیکشن، جگر کی تشکیل میں خرابی، جگر کی سوزش وغیرہ۔

گل بلی کا انفیکشن: گل بلی کی کچھ انفیکشنز بھی پیلا یرقان کا باعث بن سکتے ہیں۔

پیچش و گھسنے کے باعث: زہریلے جانور کا کاٹنا یا ڈسنٹری کی طرح کی بیماریوں کے باعث بھی جسم میں بلیروبن کی سطح بڑھ سکتی ہے۔

کیمیائی زہر کا اثر: کئی کیمیائی مرکبات، دوائیں یا زہریلے مواد کی استعمال سے بھی پیلا یرقان کا خطرہ بڑھتا ہے۔

کبد کی سالمیت کی خرابی: کبد کی خرابی کی بنا پر بھی یرقان پیدا ہو سکتا ہے، مثلاً کبد کا تکسید ہونا یا آنزائیموں کی کمی کی بنا پر۔

جھیلی کی کچھ خرابی: جیسے کہ جھیلی کی سوزش یا مواد کی کمی کی بنا پر بھی پیلا یرقان پیدا ہوتا ہے۔

پیلا یرقان کا علاج اس کی وجوہات پر منحصر ہوتا ہے۔ آپ کو اپنے مقامی ماہر طبیب کی مشورہ لینا چاہئے تاکہ وہ آپ کی موجودہ صحتی حالت کو درست تشخیص دے سکیں اور مناسب علاج کی تجویز کریں۔

پیلا یرقان

پیلا یرقان کا علاج

پیلا یرقان کا علاج اس کی وجوہات، شدت اور دورانی پر منحصر ہوتا ہے۔ آپ کو اپنے مقامی ماہر طبیب کی مشورہ لینا چاہئے تاکہ وہ آپ کی صحتی حالت کو درست تشخیص دے سکیں اور مناسب علاج کی تجویز کریں۔ یہاں کچھ عام طریقے دیئے گئے ہیں جو پیلا یرقان کے علاج میں استعمال ہوتے ہیں:

مرکب دوائیں: پیلا یرقان کے علاج میں مرکب دوائیں استعمال کی جاتی ہیں جو جگر کی صحت کو بہتر کرنے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

آرامدہ خوراک: آرامدہ خوراک کا انتظام رکھنا اہم ہوتا ہے تاکہ جگر کو کام کرنے کا مواقع مل سکے۔

پانی کی مقدار بڑھانا: زیادہ پانی پینا جگر کو صحیح طریقے سے کام کرنے میں مدد دیتا ہے۔

مناسب خوراک کی تجویز: ماہر طبیب آپ کو مناسب خوراک کی تجویز کر سکتے ہیں جو جگر کی صحت کو بہتر بناتی ہے۔

ورزش اور مضبوطی: معمولی ورزش کرنا اور صحیح مضبوطی کا خیال رکھنا جگر کی صحت کو بہتر بناتا ہے۔

جگر کی حفاظت: جگر کو زہریلے اجزاء سے بچانے کے لئے برتنوں اور کھانے کی چیزوں کی نسبت پر خیال رکھیں۔

وجبی خوراک کی پیروی: ماہر طبیب کی دی گئی وجبی خوراک کی پیروی کریں۔

مصالحہ، سالن، اور تیزابی غذائیں تج avoidanceیز کریں: ان قسم کی غذائیں جگر کی صحت کو خراب کر سکتی ہیں، ان کا استعمال پرہیز کریں۔

صحیح نمکینیت کی پیروی کریں: بلی رنگ کے پگمنٹ کی خارجی کارکری کو بہتر کرنے کے لئے نمکینیت کو مد نظر رکھیں۔

مزید معلومات حاصل کرنے کے لئے اپنے مقامی ماہر طبیب سے رابطہ کریں۔

پیلا یرقان کا علاج

یرقان کی وجوہات، علامات، اورعلاج

پیلا یرقان (Jaundice) کی وجوہات، علامات اور علاج مندرجہ ذیل ہیں:

وجوہات:

جگر کی بیماریاں: جگر کی مختلف بیماریوں مثل جگر کی تشکیل میں خرابی، جگر کا انفیکشن، یا کبد کی سوزش پیلا یرقان کی وجوہات میں شامل ہوتی ہیں۔

گل بلی کے انفیکشن: گل بلی کی کچھ انفیکشنز بھی پیلا یرقان کا باعث بن سکتے ہیں، جن کی وجہ سے بلیروبن نظام متاثر ہوتا ہے۔

پیچش یا گھسنے کے باعث: زہریلے جانور کا کاٹنا یا ڈسنٹری کی طرح کی بیماریوں کے باعث بھی جسم میں بلیروبن کی سطح بڑھ سکتی ہے۔

کیمیائی زہر کا اثر: کئی کیمیائی مرکبات، دوائیں یا زہریلے مواد کی استعمال سے بھی پیلا یرقان کا خطرہ بڑھتا ہے۔

کبد کی سالمیت کی خرابی: کبد کی خرابی کی بنا پر بھی پیلا یرقان پیدا ہو سکتا ہے، مثلاً کبد کا تکسید ہونا یا آنزائیموں کی کمی کی بنا پر۔

علامات:

جلد اور آنکھوں کی سفید حصوں کی رنگت زرد ہو جاتی ہے.

معمولی سے شدید جسم کی خارش ہوتی ہے.

ہلکی تھکن اور کمزوری کا احساس ہوتا ہے.

پیشاب کا رنگ گہرا ہو جاتا ہے، جو اس میں بلیروبن کی موجودگی کی بنا پر ہوتا ہے.

کبھی کبھی پائوں یا ہاتھوں میں سوزش کی شکایت ہوتی ہے.

علاج:

پیلا یرقان کا علاج اس کی وجوہات پر منحصر ہوتا ہے۔ علاج کی تجویز صرف ماہر طبیب کر سکتا ہے، لیکن عمومی طور پر درج ذیل اقدام اخذ کیے جاتے ہیں:

مرکب دوائیں: جگر کی صحت کو بہتر کرنے کیلئے مرکب دوائیں استعمال کی جاتی ہیں جو بلیروبن کو تنظیم دینے میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

**آرامدہ خور

اک:** آرامدہ خوراک کا انتظام رکھنا اہم ہوتا ہے تاکہ جگر کو کام کرنے کا مواقع مل سکے۔

مناسب خوراک کی تجویز: ماہر طبیب آپ کو مناسب خوراک کی تجویز کر سکتے ہیں جو جگر کی صحت کو بہتر بناتی ہے۔

جگر کی حفاظت: جگر کو زہریلے اجزاء سے بچانے کے لئے برتنوں اور کھانے کی چیزوں کی نسبت پر خیال رکھیں۔

ورزش اور مضبوطی: معمولی ورزش کرنا اور صحیح مضبوطی کا خیال رکھنا جگر کی صحت کو بہتر بناتا ہے۔

وجبی خوراک کی پیروی: ماہر طبیب کی دی گئی وجبی خوراک کی پیروی کریں۔

مصالحہ، سالن، اور تیزابی غذائیں تج اجتناب کریں: ان قسم کی غذائیں جگر کی صحت کو خراب کر سکتی ہیں، ان کا استعمال پرہیز کریں۔

صحیح نمکینیت کی پیروی کریں: بلی رنگ کے پگمنٹ کی خارجی کارکری کو بہتر کرنے کے لئے نمکینیت کو مد نظر رکھیں۔

یہ ضروری ہے کہ آپ اپنے مقامی ماہر طبیب کی مشورہ لیں تاکہ وہ آپ کی صحتی حالت کو مد نظر رکھتے ہوئے مناسب علاج کی تجویز کریں۔

یرقان کی وجوہات، علامات، اورعلاج

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top