ڈینگی کا علاج

ڈینگی کا علاج مختلف عوامل پر منحصر ہوتا ہے، جیسے کہ بیمار کی حالت، عمر، اور علاج کے مواقع پر. ڈینگی کے علاج کے چند اہم نکات مندرجہ ذیل ہیں:

استراحت اور پینی ونی: بیمار کو بہتری کے لئے کام کرنے کی بجائے اختیار استراحت کرنا چاہئے اور پینی ونی کا خصوصی خیال رکھنا چاہئے. پانی، شربت، جوس، اور اسٹیروئڈ وغیرہ کا استعمال کرنا بہتر ہوتا ہے.

پیرسٹامول یا پیرا سیٹامول: بکھرے ہوئے جسم کی درد اور تبخیل کو کم کرنے کے لئے پیرسٹامول جیسے دوائیں استعمال کی جا سکتی ہیں. لیکن ان دوائوں کو ڈاکٹر کی مشورے کے بغیر استعمال نہیں کرنا چاہئے.

ہائیڈریشن (پانی کی پوری): بیماری کے دوران بھاری پسینے کی وجہ سے بدن میں پانی کی کمی ہو سکتی ہے، اس لئے زیادہ سے زیادہ پانی کا استعمال کرنا ضروری ہوتا ہے.

وٹامن سی کا استعمال: وٹامن سی کی کمی کو پورا کرنے کے لئے خود مرکوز وٹامن سی کی دوائیں لینا بہتر ہوتا ہے.

کمپلیکیشنز کا انتظام: اگر بیمار کی حالت زیادہ بگڑتی ہے تو ہسپتال میں داخل کرنا بھی ممکن ہوتا ہے. یہاں تک کہنا ضروری ہے کہ ڈینگی کی خطرہ ناک صورتوں میں جیو اور صحت کی دیکھ بھال کا خصوصی خیال رکھنا چاہئے.

ماسکیٹو کنٹرول: ڈینگی مچھروں کی روک تھام کے لئے ماسکیٹو کنٹرول اہم ہے. مچھروں کے بچاؤ کے لئے مشتمل مرادیں کارروائی کریں جیسے کہ پانی جمع کرنے والے پھیکے کو ختم کرنا، موسمیاتی تبدیلیوں کے مطابق پانی کے ڈبے کو پر کرنا، اور مچھروں کی پیداوار کو روکنے کے لئے انسیکٹی سائیڈ کا استعمال کرنا.

صحت مند غذائیں: زیادہ سے زیادہ وٹامن اور معدنیات سے بھرپور غذائیں کھانا بیماری کے خطرات کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے.

ڈاکٹر کی مشورہ: زیادہ بیمار حالات میں ڈاکٹر کی مشورہ کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ مناسب علاج کا فیصلہ کیا جا سکے.

بڑی تعداد میں مراکز اور سرکاری صحت ادارے ڈینگی کے علاج میں مدد فراہم کرتے ہیں، لہذا اگر آپ کو ڈینگی کی علامات نظر آ رہی ہیں تو جلدی سے معائنہ کروا لیں.

ڈینگی کا علاج

ڈینگی بخار

ڈینگی بخار کو روکنے اور علاج کرنے کے لئے مندرجہ ذیل اقدامات کرنے چاہئے:

استراحت اور پینی ونی: بیماری کے دوران بہتری کے لئے کام کرنے کی بجائے اختیار استراحت کریں اور پینی ونی کا خصوصی خیال رکھیں. زیادہ سے زیادہ پانی پینا بہتری کے لئے مدد فراہم کرتا ہے.

درد اور تبخیل کم کرنے کے لئے دوائیں: پیرسٹامول یا پیرا سیٹامول جیسی درد اور تبخیل کم کرنے والی دوائیں لینے سے آرام ملتا ہے. لیکن ان دوائوں کو ڈاکٹر کی مشورے کے بغیر استعمال نہیں کرنا چاہئے.

وٹامن سی کی دوائیں: وٹامن سی کی دوائیں لینا بھی مدد فراہم کرتا ہے کیونکہ یہ بیماری کے جسم میں وٹامن کی کمی کو پورا کرتی ہیں.

صحت مند غذائیں: غذائیت سے بھرپور غذائیں کھانا اہم ہوتا ہے تاکہ جسم کی مزید قوت اور توانائی حاصل ہو سکے.

ڈاکٹر کی مشورہ: اگر آپ کو ڈینگی بخار کی علامات نظر آ رہی ہیں تو جلدی سے اپنے مقامی ڈاکٹر سے مشورہ لیں. وہ مناسب تشخیص لگائیں گے اور آپ کو مناسب علاج کا حکم دیں گے.

ماسکیٹو کنٹرول: اپنے آس پاس ماسکیٹو کنٹرول کارروائیاں کریں تاکہ ڈینگی مچھروں کی روک تھام میں مدد حاصل کریں. پانی جمع کرنے والے پھیکوں کو ختم کرنا، پانی کے ڈبے کو پر کرنا، اور انسیکٹی سائیڈ کا استعمال کرنا اہم ہوتا ہے.

ہسپتال میں داخلی: اگر بیماری کی حالت بہتر نہیں ہورہی ہو یا شدت بڑھ رہی ہے، تو ہسپتال میں داخل ہونا بھی ضروری ہوسکتا ہے.

یہ ضروری ہے کہ آپ اپنے مقامی صحت اداروں کے ہدایتوں کا پالن کریں اور ڈینگی کے اس زخم سے بچاؤ کے لئے مشتمل مرادیں اخذ کریں۔

ڈینگی بخار

ڈینگی علامات

ڈینگی بخار کی علامات عام طور پر بعد از مچھروں کا کاٹنے کے تقریباً 4 سے 10 دنوں کے بعد ظاہر ہوتی ہیں۔ یہ علامات شدید ہو سکتی ہیں اور کچھ لوگوں میں معتدل ہوتی ہیں۔ کچھ علامات درج ذیل ہوتی ہیں:

بخار: شدید بخار، جو تیزی سے بڑھتا ہے اور بعد میں کم ہوتا ہے، ڈینگی کے اہم علامات میں سے ایک ہے۔

درد و تبخیل: شدید درد اور تبخیل، جو عموماً ہڈیوں اور جوڑوں کی درمیان محسوس ہوتے ہیں، یہ بھی اہم علامات میں شامل ہیں۔

سر درد: ایک شدید سر درد، جس کو مونڈھ پر زیادہ محسوس ہوتا ہے، بھی ڈینگی کی علامات میں شامل ہوتا ہے۔

عینک کے پیسوں کی طرح کا دائرہ کشی: ڈینگی کے مریضوں کی آنکھوں کے پیسوں کی طرح کا دائرہ کشی ہونا، جس کو “ڈینگی چشمہ” کہا جاتا ہے۔

مندرجہ ذیل اضافی علامات: کھانسی، زکام، رنگوں کی پھیکوں کی صورت میں دیکھائی دینا، خون کی کمی کا نمودار ہونا، اور بلغمی مسالے کی شکایت کرنا بھی ممکن ہے۔

یہ علامات ہر شخص میں مختلف طریقے سے ظاہر ہوسکتی ہیں اور کچھ لوگوں میں یہ بہت شدید ہوتی ہیں جبکہ دوسروں میں معتدلی درجہ کی ہوتی ہیں۔ اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ ڈینگی کے شکار ہیں یا آپ کی صحت خراب ہو رہی ہے، تو جلدی سے اپنے مقامی ڈاکٹر سے رجوع کریں تاکہ صحیح تشخیص اور علاج حاصل کر سکیں۔

ڈینگی علامات

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top