کولیسٹرول اور یورک ایسڈ کا گھریلو علاج

یورک ایسڈ گیس (uric acid) وہ ذیلی مادہ ہے جو خون میں پیدا ہوتا ہے جب جسم میں پورانی پروٹین کا تناول زیادہ ہوتا ہے یا جب کلیے صحیح طور پر یورک ایسڈ کو خون سے نکالنے میں ناکام رہتے ہیں۔ ایک ٹھیک تناسب میں یورک ایسڈ کی مقدار جسم میں برقرار رہتی ہے، لیکن اگر یہ مقدار زیادہ بڑھ جائے تو یہ مسائل جیسے گھٹیا، گردوں کی پتھریاں اور مثانے کی پتھریوں کا سبب بن سکتی ہے۔

یورک ایسڈ کا علاج شامل ہوسکتا ہے:

یورک ایسڈ کا پرہیز

طب نبوی میں یورک ایسڈ کا علاج

1. تغذیہ میں تبدیلی: یورک ایسڈ کو کم کرنے کے لئے، آپ کو اپنی دائیں کاٹنی کو کم کرنے کی ضرورت ہوسکتی ہے۔ غنی پروٹین کھانے جیسے مٹن، بھینس کا گوشت، مچھلی، دالیں اور اندے کو محدود کیا جانا چاہئے۔ اضافی شوگر بھی کم کی جانی چاہیے، کیونکہ یہ بھی یورک ایسڈ کے اضافی ہونے کا کارکند ہوسکتا ہے۔ آپ کو مندرجہ ذیل غذاوں کو شامل کرنا چاہئے:

– سبزیاں اور پھل جن میں وٹامن سی شامل ہوتا ہے، مثلاً آم، لیموں، آڑو، آملہ، ٹماٹر اور سبز شاہیں۔

– فصلیں جن میں زیادہ پانی پایا جاتا ہے مثلاً کھیرے اور تربوز۔

– گھٹیا مریضوں کو توازن دار غذائیں لینی چاہئیں جو یورک ایسڈ کو کم کرنے کا مددگار ہوسکتی ہیں، جیسے کہ فلیکس سید (flaxseed)، چھوٹی الائچی (cardamom)، سونف (fennel) اور ہلدی (turmeric)۔

یورک ایسڈ کا پرہیز

2. پانی کی زیادتی: روزانہ کم از کم 8-10 گلاس پانی پینا چاہئیے۔ یہ پانی جسم میں موجود زیادہ یورک ایسڈ کو تخلیص کرنے میں مددگار ہوسکتا ہے۔

3. ورزش کریں: معمولی سے زیادہ مدت تک جاری رکھی گئی ورزش جیسے کہ چلنا، دوڑنا یا سوئمنگ کرنا یورک ایسڈ کو کم کرنے میں مددگار ہوسکتی ہیں۔

4. میڈیکیشن: کچھ مریضوں کو دوائیوں کی ضرورت ہوسکتی ہے جو یورک ایسڈ کی سطح کو کم کرنے میں مدد کرتی ہیں۔ یہ دوائیاں آپ کے ڈاکٹر کے تجویز پر لینی چاہئیں۔

5. چائے کم کریں: چائے میں موجود کافیئن یورک ایسڈ کو بڑھا سکتا ہے۔ آپ کو اس کی مقدار کو کم کرنے کی کوشش کرنی چاہئیے۔

6. الکوحالی دریافت کریں: الکوحالی (alcohol) بھی ی

ورک ایسڈ کی سطح کو بڑھا سکتی ہے، لہذا آپ کو الکوحال کے استعمال کو محدود کرنا چاہئیے یا بہتر ہوتا ہے کہ پوری طرح سے چھوڑ دیں۔

7. وزن کم کریں: اگر آپ کا وزن زیادہ ہے تو یورک ایسڈ کی مقدار بڑھ سکتی ہے، لہذا وزن کم کرنے کی کوشش کریں۔

8. ہربل چائے کا استعمال: کچھ ہربل چائے یا ہربل سپلیمنٹس بھی یورک ایسڈ کو کم کرنے میں مددگار ہوسکتے ہیں۔ بعض ہربل چائے جن میں شامل ہوسکتے ہیں واڈے (burdock)، گلیسیرائڈ (guggul)، گلوکوزامائین (glucosamine) اور آڈمسیہ (devil’s claw) ہیں۔

یورک ایسڈ کا پرہیز

یورک ایسڈ کی علامات

یورک ایسڈ کے بڑھنے کی صورت میں، آپ کو اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کرنا چاہئے۔ وہ آپ کو مناسب علاج کا مشورہ دیں گے جو آپ کی صحت کو بہتر بنانے میں مدد کر سکتا ہے۔ علاج کیا جائے، مشورے کے ساتھ منظم طور پر آپ کو جدول میں دکھایا گیا دوائیوں کو استعمال کریں اور آپ کو ایسے متابولک دائروں میں تجویزات کی ضرورت ہوسکتی ہیں جو یورک ایسڈ کو خون سے نکالتے ہیں۔

تاحال ایک مختصر جائزہ دیتے ہوئے یورک ایسڈ کے علاج کے بارے میں بتایا گیا ہے۔ اگر آپ کو یورک ایسڈ کے بارے میں مزید تفصیلی معلومات یا دیگر مسائل کے بارے میں کوئی سوال ہو تو براہ کرم پوچھیں۔

کولیسٹرول اور یورک ایسڈ کا گھریلو علاج

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top