گردے کی پتھری کی علامات

گردے کی پتھری یا کلی پتھری (کِلسٹون، یا کِدنی سٹون) کی صورت میں گردے کے اندر کی مثالی مادے کے قطرے (کرسٹلز) جم جاتے ہیں جو کے فیض غذائی عناصر، مثلاً کیلشیم اور یورک ایسڈ، کی انتہائی زیادہ مقداروں کی بنا پر بنتے ہیں۔ گردے کی پتھری کی علامات اور نشانات مندرجہ ذیل ہو سکتے ہیں:

درد: گردے کی پتھری کی ایک مشترک علامت درد ہوتا ہے، عموماً پٹھوں یا کمر کی پینوں کے قریب شروع ہوتا ہے اور پھر نیچے کی طرف بڑھتا ہے۔

پیشاب کی نشیب: پتھوں کے راستے میں پتھری کی وجہ سے پیشاب کا راستہ رکاوٹی ہو جاتا ہے، جس سے پیشاب کی نشیب اور قطرہ قطرہ نکلنے کی تکلیف ہو سکتی ہے۔

پیشاب کی رنگت: پتھری کی وجہ سے پیشاب کی رنگت بدل سکتی ہے، عموماً گہرا یا زرد رنگ کا ہوتا ہے۔

قہقرہ: پتھری کی حرکت کی بنا پر پٹھوں میں یا کمر میں قہقرہ (اچانک درد) ہو سکتا ہے۔

معدنی مواد کی بڑھتی تعداد: اگر پتھری بڑی ہو تو پیشاب میں معدنی مواد کی زیادہ تعداد دیکھنے میں مدد ملتی ہے۔

اُلجن: پیشاب کرتے وقت اُلجن کی حساسیت بڑھ سکتی ہے۔

قیئت: پتھری کے حرکت کی بنا پر قیئت (التهاب) کا خطرہ بڑھ سکتا ہے جو پیشاب کرنے کی تکلیف بڑھا دیتا ہے۔

معدنی ترکیبات کا پیشاب میں حاضر ہونا: پتھری کی تشکیل کی وجہ سے پیشاب میں معدنی ترکیبات کی زیادہ مقدار حاضر ہوتی ہے جو پیشاب کی شفافیت کو کم کر دیتی ہے۔

یہ علامات پتھری کی بہتری کے لئے زیادہ پانی پیئیں، طبی مشورے پر عمل کریں اور ضروری معائنے کروائیں۔ پتھری کی صورت میں طبی مشورہ لینا اہمیت رکھتا ہے تاکہ درست تشخیص لگایا جا سکے اور مناسب علاج کی جا سکے۔

گردے کی پتھری کی علامات

گردے کی پتھری کا علاج

گردے کی پتھری کا علاج انعامی حالات کے مطابق مختلف ہو سکتا ہے۔ پتھری کی صورت میں طبی مشورہ لینا اہمیت رکھتا ہے تاکہ درست تشخیص لگایا جا سکے اور مناسب علاج کی جا سکے۔ یہاں کچھ عام طریقے بتائے گئے ہیں جو پتھری کے علاج میں استعمال ہوتے ہیں:

پانی کی زیادہ مقدار میں استعمال: پانی کی زیادہ مقدار میں استعمال کرنا اہمیت رکھتا ہے تاکہ گردے کی پتھری کی موجودگی کے باوجود پیشاب کے راستے کا کرایہ کم ہو اور پتھری کو براہ راست پیشاب کے ساتھ بہکر نکلنے میں مدد ملے۔

دوائیں: گردے کی پتھری کے علاج میں دوائیں بھی استعمال کی جاتی ہیں جو پتھری کو پگھلانے اور پیشاب کے راستے کو کھولنے میں مدد دیتی ہیں۔ ڈاکٹر کی مشورہ لینا ضروری ہوتا ہے کیونکہ دوائیں افراد کے صحتی حالات اور پتھری کی جنسیت پر منحصر ہوتی ہیں۔

اہم خوراکیں کمیاب کریں: خوراک میں زیادہ نمک اور میٹھے کو محدود کرنا ضروری ہوتا ہے کیونکہ یہ پتھری کی تشکیل کو بڑھا سکتے ہیں۔

علاجی عمل (سرجری): اگر پتھری بڑی ہو یا اندرونی راستوں میں گھس گئی ہو تو طبی مشورے کے بعد سرجری کا اخذ کرنا ممکن ہوتا ہے۔ سرجری کے ذریعے پتھری کو نکالنے کی کوشش کی جاتی ہے۔

تجربہ‌شدہ ہربل علاج: کچھ لوگ ہربل علاجات کو بھی استعمال کرتے ہیں جیسے کہ پتھری کے دسیسے اور دوائیں۔ ان میں کچھ جڑی بوٹیاں اور نسخے شامل ہیں جو مدد فراہم کر سکتے ہیں، لیکن ان کا استعمال بغیر ڈاکٹر کی مشورہ لیے نہ کریں۔

یہاں دوبارہ ذرا اہمیت دونگا کہ پتھری کے علاج کیلئے ضروری ہے کہ آپ اپنے ڈاکٹر کی مشورہ لیں تاکہ وہ آپ کے مخصوص صحتی حالات اور پتھری کے حالات کو دیکھ کر مناسب علاج کی مشورہ دے سکیں۔

گردے کی پتھری کا علاج

گردے کی درد کا فوری علاج

گردے کی درد کا فوری علاج مندرجہ ذیل کئی طریقوں سے ممکن ہے، لیکن بہتر ہوتا ہے کہ آپ پہلے اپنے ڈاکٹر یا صحت کی دیکھ بھال کے ماہر سے مشورہ لیں:

پانی کی زیادہ مقدار میں استعمال: پانی پینا گردے کی صحت کے لئے بہترین علاج ہوتا ہے۔ پانی پینے سے گردوں کی پتھری کی حرکت بڑھتی ہے اور پٹھوں کی راہوں کو کھولنے میں مدد ملتی ہے۔

گرم تھیلی پر پیٹنا: گرم تھیلی کو درد کی جگہ پر رکھ کر پٹھوں کی خون کی روانی میں اضافہ کیا جا سکتا ہے جو درد کو کم کرنے میں مدد فراہم کر سکتا ہے۔

اہم خوراکیں متناسب کریں: غذائی اجزاء کی ترتیب میں تبدیلی کر کے زیادہ نمک اور میٹھے کی مقدار کم کرنے سے بھی درد میں کمی محسوس کی جا سکتی ہے۔

پریشانی کم کرنے کے طریقے: پریشانی اور تنش کو کم کرنے کے طریقوں سے بھی درد کی حد میں کمی ممکن ہوتی ہے۔ ریکسیشن ٹیکنیکس، دیراپورو میں پیشاب کرنے کی تکلیف کم کرنے کی تمرین اور دیراپورو کی بجائے دھیرے دھیرے پیشاب کرنے کی کوشش کرنا اندرونی راستوں کو کھولنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

درد کم کرنے والی دوائیں: آپ کے ڈاکٹر کی مشورہ لینے کے بعد درد کم کرنے والی دوائیں بھی استعمال کر سکتے ہیں۔ یہ دوائیں عموماً درد کو کم کرنے، پٹھوں کی راہیں کھولنے اور پتھری کی حرکت میں مدد فراہم کرتی ہیں۔

یہاں دھیان رہے کہ ان تمام طریقوں کو آپ کسی ماہر صحت کی مشورہ لے بغیر استعمال نہ کریں، خصوصاً اگر آپ کو کوئی خطرہ زدہ حالت ہو۔ ڈاکٹر کی مشورہ لینا ہر صورت ضروری ہوتا ہے تاکہ آپ کو درست تشخیص دیا جاسکے اور مناسب علاج کی جاسکے۔

گردے کی درد کا فوری علاج

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top